قرآنی تعلیمات اور امت مسلمہ کی نجات از رہبر انقلاب

نیتوں کو خالص رکھیں

آپ خدا کے لیے اپنی نیتوں کو خالص رکھیں اور آپ ان کو خواہشات اور مختلف دیگر محرکات سے پاک رکھیں تاکہ آپ کے اعمال خدا قبول کرے اور آپ کو اللہ تعالیٰ کی طرف سے اجر ملے۔

 

 

 

 

 

 

ہم قرآن سے دور ہیں

اور یہ قرآنی تحریک ہمارے ملکوں میں جاری رہنی چاہیے۔ ہم قرآن سے دور ہیں۔ ہم قرآن اور قرآنی تصورات سے ناواقف ہیں۔ ہمیں اس سلسلے میں کچھ کرنا چاہیے۔ ہمیں اتنی محنت کرنی چاہیے کہ قرآنی تصورات مسلم ممالک اور خطے میں مقبول تصورات اور عوامی تفکر میں بدل جائیں۔

 

 

 

 

 

قرآنی معارف، امت مسلمہ کی نجات!

میں یہاں جو کہنا چاہتا ہوں وہ یہ ہے کہ ہمارے پاس قرآن میں کچھ معارف ہیں جو کہ واقعی اسلامی امت کے لیے ایک با عزت اور شاندار زندگی کی تعمیر کرتے ہیں۔ وہ واقعی اسلامی امت کے لیے مشکلات سے نجات کا ذریعہ ہیں۔ ہمارے ہاں قرآن میں ایسی تعلیمات موجود ہیں۔

 

 

 

 

 

 

قرآنی تعلیمات کو عملی جامہ پہنانا

قرآنی تعلیمات کو عملی جامہ پہنانے کے لیے ہمیں بنیادی طور پر انہیں اسلامی معاشروں میں مسلمانوں کے ذہنوں میں بسانا چاہیے۔ ہمیں اس طرح کام کرنا چاہیے کہ یہ تصورات اسلامی برادری کے لیے اتنے شفاف ہو جائیں کہ کوئی بھی چیز انہیں آگے بڑھنے سے نہ روک سکے۔ ہمیں اس مرحلے پر سنگین مسائل درپیش ہیں۔

 

 

 


قرآنی تبلیغ کی ضرورت

ہمیں ان تعلیمات کو اچھی طرح سے قائم کردہ اصولوں اور امت مسلمہ کے تمام لوگوں کے درمیان مشترکہ خیالات میں تبدیل کرنے کے لیے کچھ کرنا چاہیے۔ یہ ایک ایسا کام ہے جسے قرآن کے شعبے میں انجام دیا جانا چاہیے۔

متعلقہ

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے